ہم سادہ لوح لوگ,جگر چھلنی ہوۓ بریہ

ہم سادہ لوح لوگ,جگر چھلنی ہوۓ بریہ

پھر اک چہرے پہ کئی چہروں کو پڑھنے کی ضد پہ ہیں

اسی کے متعلق مزید شعر

Copyright 2020 | Anzik Writers