آنچل سے اپنے کبھی ہوا دے مجھ کو

آنچل سے اپنے کبھی ہوا دے مجھ کو

خواب آنکھوں میں بھر کے سلا دے مجھ کو،

تیرے فراق کی سکرات لیے پھر رہا ہوں،

آرام آ جائے مجھے، دعا دے مجھ کو،

کسی خواب میں بھولنے کی سوچوں تجھے،

اس خواب میں آ کے جگا دے مجھ کو،

میں تمہیں پاس پاکے بھی تم سے نہ مل سکا،

کوئی اور راستہ کوئی اور پتا دے مجھ کو،

وقت کی آنکھ میں سارے خواب لٹا کے آیا ہوں،

مجھے پاس بلا اور سزا دے مجھ کو،

کبھی کان کی سرگوشی میں کہہ دے احسن،

تو ہو گیا ہے ملنگ اب بھلا دے مجھ کو.

اسی کے متعلق مزید شعر

Copyright 2020 | Anzik Writers