دنیا کے تنہا ترین درخت کا قصہء غم (دشتِ تنہائی)

دنیا کے تنہا ترین درخت کا قصہء غم تحریر: ندیم رزاق کھوہارا اس نے پہلی بار جب کونپلیں کھولیں تو اس کے اردگرد ایک بہار تھی سبزے کی بہار۔۔۔۔ اس کے جیسے کئی ایسے درخت تھے جو جابجا، قطار اندر قطار کھڑے تھے۔ کچھ اس کی طرح ابھی سر اٹھا رہے تھے کچھ شان سے […]

 مزید پڑھیں

ہاراں کھا کھا جی رہا، میرا رہنا میرا ثبوت اے،

ہاراں کھا کھا جی رہا، میرا رہنا میرا ثبوت اے، تردا-تردا تھکّ جاواں، جتھے جانا بڑی ہی دور اے ہر گھر 'ٹرافی' جت دی، میرے گھر تاں میری تصویر اے، کویں 'ہر' کے ہمت ہار جاں، جد 'ہاراں' میری تقدیر اے۔ میرا دنیاں 'ناں' نہ جاندی، پر گھر تاں میرا وی 'ناں' اے، ہر دن […]

 مزید پڑھیں

دھنا جٹّ 'پتھر' وچّ ربّ ویکھدا،

دھنا جٹّ 'پتھر' وچّ ربّ ویکھدا، مجنوں 'لیلیٰ' وچّ ربّ ویکھدا، سداما 'کرشن' وچّ ربّ ویکھدا، رانجھا 'ہیر' وچّ ربّ ویکھدا، سسی تھلاں وچّ سڑے، پنو سسی وچّ ربّ ویکھدا، مہیوال چھجو دے چوبارے وچوں، سوہنی وچوں ربّ ویکھدا، گھڑے 'شیریں' دیاں مورتاں 'چوں فرہاد ربّ ویکھدا، منصور 'سولی' چڑھن تو پہلاں اپنے آپ 'چ' […]

 مزید پڑھیں

تجھے دیکھتیں ھیں تو لگتا ہےبہار آئی

تجھے دیکھتیں ھیں تو لگتا ہےبہار آئی تجھے چاہتیں ھیں تو لگتا ہےخمار آئی تجھے میں کیوں نا چاہوں یے بتادے مجھے تیری یے بے رخی مجھ پے ہے عذاب لائی تجھے چاہا ھے چاہوگا زندگی کے ہر اک موڑ پر' اہیر' دعا ہی نکلیگی ہمیشا تیرے لئے ، نا نکلیگی کبھی وائی۔۔۔۔

 مزید پڑھیں

ﭘﺌﯿﻤﺎﻧﮧ ﺿﺒﻂ ﺟﺐ ﺑﮭﺮ ﺁﺋﯿﮕﺎ ﺗﻮ ﮨﻢ ﺭﺅ

ﭘﺌﯿﻤﺎﻧﮧ ﺿﺒﻂ ﺟﺐ ﺑﮭﺮ ﺁﺋﯿﮕﺎ ﺗﻮ ﮨﻢ ﺭﺅ ﻟﯿﻨﮕﮯ ﮐﻮﺋﯽ ﺑﮭﯽ ﺍﭘﻨﺎ ﺍﺩﮬﺮ ﺁﺋﯿﮕﺎ ﺗﻮ ﮨﻢ ﺭﺅ ﻟﯿﻨﮕﮯ، ﺍﺑﮭﯽ ﺗﻮ ﻣﯿﺮﯼ ﺁﻧﮑﮫ ﭘﺎﯾﺎﺏ ﺍﺷﮏ ﮨﮯ ﺻﺒﺮ ﮨﮯ، ﺁﻧﮑﮭﻮﮞ ﻣﯿﮟ ﺍﯾﮏ ﺳﻤﻨﺪﺭ ﺍﺗﺮ ﺁﺋﯿﮕﺎ ﺗﻮ ﮨﻢ ﺭﺅ ﻟﯿﻨﮕﮯ ﯾﮧ ﭨﮭﻮﮐﺮﯾﮟ ﺗﻮ ﻣﻞ ﺭﮨﯽ ﮨﯿﮟ ﺍﭘﻨﮯ ﮨﯽ ﺧﻮﻥ ﮐﯽ ﻧﺴﺒﺖ، ﮐﻮﺋﯽ ﻏﯿﺮ ﺟﺐ ﮨﻤﯿﮟ ﮔﺮﺍﺋﯿﮕﺎ ﺗﻮ ﮨﻢ […]

 مزید پڑھیں

آنچل سے اپنے کبھی ہوا دے مجھ کو

آنچل سے اپنے کبھی ہوا دے مجھ کو خواب آنکھوں میں بھر کے سلا دے مجھ کو، تیرے فراق کی سکرات لیے پھر رہا ہوں، آرام آ جائے مجھے، دعا دے مجھ کو، کسی خواب میں بھولنے کی سوچوں تجھے، اس خواب میں آ کے جگا دے مجھ کو، میں تمہیں پاس پاکے بھی تم […]

 مزید پڑھیں

وہ شخص تھا پشتی بانی والا احسن

وہ شخص تھا پشتی بانی والا احسن میں جب جب گرا اس نے سنبھالا احسن، میں سر ورق کھلا تھا زمانے کی آنکھ میں، میرے عیبوں پر اس نے پردہ ڈالا احسن میں زخموں کی آغوش میں سو جاتا تھا اکثر، مجھے پھر پلکوں پے اس نے پالا احسن وہ رزق تھا روح کا میرے […]

 مزید پڑھیں

ﺭﺍﺕ ﮐﺎ ﻓﺴﺎﻧﮧ ﮐﮩﺘﺎ ﮨﮯ ﺳﺘﺎﺭﮮ ﺑﺎﺕ ﻧﮩﯿﮟ

ﺭﺍﺕ ﮐﺎ ﻓﺴﺎﻧﮧ ﮐﮩﺘﺎ ﮨﮯ ﺳﺘﺎﺭﮮ ﺑﺎﺕ ﻧﮩﯿﮟ ﮐﺮﺗﮯ ﺍﺣﺴﻦ ﺍﯾﮏ ﻃﻮﯾﻞ ﺩﺭﺩ ﮨﮯ ﮨﻢ ﮈﺭ ﮐﮯ ﻣﺎﺭﮮ ﺑﺎﺕ ﻧﮩﯿﮟ ﮐﺮﺗﮯ ﺍﺣﺴﻦ، ﺷﯿﺸﺎ ﻭ ﺟﺎﻡ ﻭ ﻟﺐ ﮐﺎ ﺭﺷﺘﮧ ﺑﮭﯽ ﮨﮯ ﺍﺯﻝ ﺳﮯ ﮔﮩﺮﺍ، ﺧﺎﻣﻮﺵ ﮨﯿﮟ ﻣﮕﺮ ﺳﺎﺭﮮ ﺑﺎﺕ ﻧﮩﯿﮟ ﮐﺮﺗﮯ ﺍﺣﺴﻦ ﻧﮧ ﺩﺳﺖ ﮨﯿﮟ ﮐﺴﯽ ﺯﻧﺠﯿﺮ ﻣﯿﮟ ﻧﮧ ﻟﺐ ﮐﺴﯽ ﺯﻧﺪﺍﻥ ﻣﯿﮟ، ﻣﺤﻠﻮﻟﯿﺖ ﻣﯿﮟ […]

 مزید پڑھیں

ﭘﺎﺋﻮﮞ ﮐﺎﻧﭩﻮﮞ ﭘﮯ ﺭﮐﮫ ﮐﮯ ﭼﻠﺘﺎ ﺭﮨﺎ ﺍﯾﮏ

ﭘﺎﺋﻮﮞ ﮐﺎﻧﭩﻮﮞ ﭘﮯ ﺭﮐﮫ ﮐﮯ ﭼﻠﺘﺎ ﺭﮨﺎ ﺍﯾﮏ ﺩﯾﻮﺍﻧﮧ ﺫﮨﻦ ﻣﯿﮟ ﺭﮨﺎ ﺗﻤﺎﻡ ﻋﻤﺮ ﺗﯿﺮﺍ ﻭﮦ ﺍﻧﺪﺍﺯ ﺑﮯ ﺭﺧﯽ ﺟﺎﻧﺎﮞ ﺫﮨﻦ ﻣﯿﮟ ﺭﮨﺎ، ﻣﻨﺘﻈﺮ ﻧﮕﺎﮨﻮﮞ ﺳﮯ ﺑﮭﯽ ﮔﺬﺭﺍ ﻣﻘﺪﺱ ﺟﮕﺎﮨﻮﮞ ﺳﮯ ﺑﮭﯽ ﮔﺬﺭﺍ، ﻣﮕﺮ ﺩﺭﺩ ﺳﮯ ﻧﮧ ﮐﺒﮭﯽ ﺍﻟﺠﮫ ﺳﮑﺎ ﻣﺌﺨﺎﻧﮧ ﺫﮨﻦ ﻣﯿﮟ ﺭﮨﺎ ﭘﮭﺮ ﻧﯿﻨﺪﻭﮞ ﮐﮯ ﺗﺴﻠﺴﻞ ﮐﺒﮭﯽ ﮨﻮﺍﺋﻮﮞ ﺳﮯ ﺑﮭﯽ ﭨﻮﭨﺘﮯ ﺭﮨﮯ، ﻣﮕﺮ […]

 مزید پڑھیں

میریاں خوبصورت نگاہاں تیرے ولّ ہو گئیاں،

میریاں خوبصورت نگاہاں تیرے ولّ ہو گئیاں، دیکھدا سی، کدھرے ہور، نگاہاں تیرے ولّ ہو گئیاں، چاہندا سی، آتما تے شاید، جنماں تو چلی پیاس دھیمی ہو گئی، ہونا چاہیدا سی جو پہلاں، اسدے مسکرؤن تے میری تڑف ہور تیز ہو گئی.... مسکراؤندی کی ہے، ساڈی گلی آؤنا، ہسنا سکھا دیؤگا، ہسنا سکھا دیؤگا، رونا […]

 مزید پڑھیں
Copyright 2020 | Anzik Writers