مہران، مجھے دو

مہران، مجھے دو آواز کا اک پنکھ مہران، مجھے دو ٹوٹے ہوئے رشتے پرکھوں کے نوشتے مہران، مجھے دو زرخیز کنارا یہ ہاتھ تمہارا گرم اور سنہرا مہران، مجھے دو امید اور پانی

 مزید پڑھیں

رات ڈھلنے کے بعد کیا ہوگا

رات ڈھلنے کے بعد کیا ہوگا دن نکلنے کے بعد کیا ہوگا سوچتا ہوں کہ اس سے بچ نکلوں بچ نکلنے کے بعد کیا ہوگا خواب ٹوٹا تو گر پڑے تارے آنکھ ملنے کے بعد کیا ہوگا رقص میں ہوگی ایک پرچھائیں دیپ جلنے کے بعد کیا ہوگا دشت چھوڑا تو کیا ملا ثروتؔ گھر […]

 مزید پڑھیں

جب شام ہوئی میں نے قدم گھر سے نکالا

جب شام ہوئی میں نے قدم گھر سے نکالا ڈوبا ہوا خورشید سمندر سے نکالا ہر چند کہ اس رہ میں تہی دست رہے ہم سودائے محبت نہ مگر سر سے نکالا جب چاند نمودار ہوا دور افق پر ہم نے بھی پری زاد کو پتھر سے نکالا دہکا تھا چمن اور دم صبح کسی […]

 مزید پڑھیں
Copyright 2020 | Anzik Writers