زید سے زیدی بنا اور بکر سے بکری ہوا

زید سے زیدی بنا اور بکر سے بکری ہوا سامنا بزدل سے تھا میں اس لیے بکری ہوا یوں سجا رکھا تھا قربانی کا بکرا شوخ نے دل ہمارا دیکھتے ہی دیکھتے بکری ہوا

 مزید پڑھیں

دریا میں دشت دشت میں دریا سراب ہے

دریا میں دشت دشت میں دریا سراب ہے اس پوری کائنات میں کتنا سراب ہے روزانہ اک فقیر لگاتا ہے یہ صدا دنیا سراب ہے ارے دنیا سراب ہے موسیٰ نے ایک خواب حقیقت بنا دیا ویسے تو گہرے پانی میں رستہ سراب ہے پوری طرح سے ہاتھ میں آیا نہیں کبھی وہ حسن بے […]

 مزید پڑھیں

ابھی کسی کے نہ میرے کہے سے گزرے گا

ابھی کسی کے نہ میرے کہے سے گزرے گا وہ خود ہی ایک دن اس دائرے سے گزرے گا بھری رہے ابھی آنکھوں میں اس کے نام کی نیند وہ خواب ہے تو یونہی دیکھنے سے گزرے گا جو اپنے آپ گزرتا ہے کوچۂ دل سے مجھے گماں تھا مرے مشورے سے گزرے گا قریب […]

 مزید پڑھیں

اپنے انکار کے برعکس برابر کوئی تھا

اپنے انکار کے برعکس برابر کوئی تھا دل میں اک خواب تھا اور خواب کے اندر کوئی تھا ہم پسینے میں شرابور تھے اور دور کہیں ایسے لگتا ہے کہیں تخت ہوا پر کوئی تھا اس کے باغات پہ اترا ہوا تھا موسم رنگ قابل دید ہر اک سمت سے منظر کوئی تھا شک اگر […]

 مزید پڑھیں

بے وفائی کرکے نکلوں یا وفا کر جاؤں گا

بے وفائی کرکے نکلوں یا وفا کر جاؤں گا شہر کو ہر ذائقے سے آشنا کر جاؤں گا تو بھی ڈھونڈے گا مجھے شوق سزا میں ایک دن میں بھی کوئی خوبصورت سی خطا کر جاؤں گا مجھ سے اچھائی بھی نہ کر میری مرضی کے خلاف ورنہ میں بھی ہاتھ کوئی دوسرا کر جاؤں […]

 مزید پڑھیں
Copyright 2020 | Anzik Writers