آئینہ دیکھ اپنا سا منہ لے کے رہ گئے

آئینہ دیکھ اپنا سا منہ لے کے رہ گئے صاحب کو دل نہ دینے پہ کتنا غرور تھا قاصد کو اپنے ہاتھ سے گردن نہ ماریے اس کی خطا نہیں ہے یہ میرا قصور تھا ضعف جنوں کو وقت تپش در بھی دور تھا اک گھر میں مختصر بیاباں ضرور تھا اے وائے غفلت نگۂ […]

 مزید پڑھیں

یہ نہیں ہو سکتا کہ ملک کو دستور سےرکھ کر محروم

یہ نہیں ہو سکتا کہ ملک کو دستور سےرکھ کر محروم بدقسمت ملک کو پہلےبقاوسلامتی سےدور کردیا جائے پھر بےضابطہ ومن مانی آئینی اس میں ردوبدل کرکے باقیات ملک کو بہ مطابق دستور چکناچور کردیا جائے

 مزید پڑھیں

گو نہ سمجھوں اس کی باتیں گو نہ پاؤں اس کا بھید

بزم شاہنشاہ میں اشعار کا دفتر کھلا رکھیو یا رب یہ در گنجینۂ گوہر کھلا شب ہوئی پھر انجم رخشندہ کا منظر کھلا اس تکلف سے کہ گویا بت کدے کا در کھلا گرچہ ہوں دیوانہ پر کیوں دوست کا کھاؤں فریب آستیں میں دشنہ پنہاں ہاتھ میں نشتر کھلا گو نہ سمجھوں اس کی […]

 مزید پڑھیں
Copyright 2020 | Anzik Writers